بلاگ نامہ

ابوجی

آہ۔۔ ہمارے پیارے ابو جی

یہ 3 مئی 2016 کا دن تھا اور وقت ظہر کا تھا جب ہمارے پیارے ابو جی اس فانی دنیا سے کبھی نہ ختم ہونے والی دنیا میں تشریف فرماگئے۔ وہ وقت قیامت سا تھا جب ابو جی نے اپنی آخری سانسیں ہمارے ہاتھوں میں لیں۔ ابوجی اور میرا ساتھ اللہ رب العزت نے صرف 20 سال کا مختصر عرصہ ہی مقرر کیا تھا۔ ابو جی نے اپنی زندگی میں بیماری اور تکالیف کے باوجود تمام اولاد کو پڑھایا اور اچھی تربیت دی ابوجی کے ہر قدم میں امی جی نے بھرپور ساتھ دیا۔ یہ تقریبا 1995 کے قریب کی بات ہے جب ابو جی کو شوگر کی بیماری لاحق ہوگئی۔ ابو نے اسی بیماری کے ساتھ اپنی باقی کی زندگی گزاری۔ مجھے اچھی طرح یاد ہے کہ ابو جی نے انسولین کو باقاعدگی سے لگایا جس کی وجہ سے ان کے جسم کو کوئی حصہ ایسا نہیں بچ پایا تھا جہاں اگر سوئی اوپر بھی رکھ دو تو درد سے ہائے نہ نکلے۔ لیکن اس سب کے باوجود ابوجی نے کبھی بھی اپنا کوئی کام کسی دوسرے کے ذمہ نہیں لگایا وہ اپنے کام خود کرتے تھے لیکن رب کو کچھ اور منظور تھا کہ ابو جی کو اس… مزید پڑھیں »