بلاگ نامہ

قربانی

عید الا ضحیٰ کی آمد آمد ہے۔عید الا ضحیٰ اللہ تعالیٰ کے جلیل القدر پیغمبر کی سنت ہے جو تا قیامت تک زندہ رہے گی۔عید الاضحیٰ اس واقعے کی یاد میں منائی جاتی ہے،جودنیا میں سب سے زیادہ مثالی واقعہ ہے۔قرآن کریم میں ارشاد ہے ”پس جب وہ اس کے ساتھ دوڑنے پھرنے کی عمرکو پہنچا اس نے کہا اے میرے پیارے بیٹے! یقیناً میں سوتے میں دیکھا کرتا ہوں کہ میں تجھےذبح کر رہا ہوں، پس غور کر تیری کیا رائے ہے؟ اس نے کہا اے میرے باپ! وہی کر جو تجھے حکم دیا جاتاہے۔ یقیناً اگر اللہ چاہے گا تو مجھے تُو صبر کرنے والوں میں سے پائے گا“۔”پھر جب وہ دونوں فرمانبرداری پر آمادہ ہوگئےاوراس ( یعنی باپ ) نے اس ( رضامندی ظاہر کرنے والے بیٹے ) کو ماتھے کے بل گرا لیا۔“ا۔”اور ہم نے اس ( یعنی ابراہیم ) کو پکار کر کہا اے ابراہیم ! تو اپنی رؤیا پوری کر چکا،ہم اسی طرح محسنوں کا بدلہ دیا کرتے ہیں۔یہ یقیناً کھلی کھلی آزمائش تھی۔“

حضرت ابراہیم علیہ السلام نے یہ ثابت کردیاکہ مالک کائنات اللہ تعالیٰ کے حکم کے آے سرجھکانا لازم و ملضوم ہے۔قربانی کرنا بھی ہر صاحب حیشیت پر فرض کے برابر ہے،کیوںکہ اللہ تعالیٰ کو قربانی کا عمل بے حد پسند ہے اسی وجہ سے اللہ تعالیٰ نے اس کا ثواب بھی یادہ رکھا ہے۔

مشہور حدیث میں آتا ہے کہ ”ایک دفعہ صحابہ رضی اللہ عنھم نے حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے سوال کیا یہ قربا نی کیا ہے؟ آپ صلی اللہ علی وسلم نے ارشاد فرمایا یہ تمھارے باپ ابراہیم ( علیہ السلام ) کی سنت ہے،صحابہ رضی اللہ عنھم نے عرض کیا اس کا کیا فائدہ ہے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ایک بال کے بدلے میں ایک نیکی ملتی ہے“۔ ( کم وبیش )

جو شخص اتنی استطاعت رکھتا ہو کہ وہ قربانی کر سکے اس کے باوجود اگر قربانی نہ کرے تواس کے بارے میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ”قربانی کی استطاعت کے باوجود جو شخص قربانی نہ کرے وہ ہماری عید گاہ کے قریب نہ آئے“۔( کم وبیش )

( نوٹ )

یہ ترجمات کم وبیش ہو سکتے ہیں۔اگر کسی آیت یا حدیث کا ترجمہ صحیح نہ ہو تو مجھے فوراً صحیح ترجمہ ارسال کریں۔اللہ ہم سب کو معاف فرمائے۔آمین

4 تبصرے برائے “قربانی”

  1. عید کی مبارک باد قبول فرمائیے
    ابھی سے کل پرسوں کا کچھ علم نہیں کیا ہو

    1. خیر مبارک آپ کو بھی مبارک ہو عید ۔ آپ نے بلکل درست فرمایا کہ کل پرسوں کسے علم کہ ہو گا کیا

      1. Hina Liaqat says:

        I also want to write and post the blogs Kindly guide me accordingly

  2. کافی اچھا لکھتے ہیں جی آپ

تبصرہ کریں