بلاگ نامہ

ماہ: March 2012

میری ذات ذرہ بے نشان

اس شاعری پر نظم کی شاعرہ واقعی داد کی مستحق ہیں ، انہوں نے جس طرح سے ناول لکھا پھر اس کے مطابق شاعری بھی لکھی تو یہ واقعی کوئی آسان کام نہیں ہے۔ان کے ناول پر پھر ڈرامہ بنایا گیا جوکہ پورے پاکستان اور پاکستان کے باہر بھی بہت مشہور ہوا اور ایوارڈ بھی حاصل کیئے۔ ناول و نظم کا نام :- میری ذات ذرہ بے نشاں شاعرہ و ناول نگار :- عمیرہ احمد آواز :- راحت فتح علی خان ناول پر ڈرامہ بنانے والی پروڈکشن کا نام :- 7th Sky چینل کا نام :- جیو ٹی وی ” میری ذات ذرہ بے نشان “ میں وہ کس طرح سے کروں بیان جو کے گئے ہیں ستم یہاں سنے کون میری یہ داستان کوئی ہم نشین ہے نہ راز دان جو تھا جھوٹ وہ بنا سچ یہاں نہیں کھولی مگر میں نے زبان یہ اکیلا پن یہ اداسیاں میری زندگی کی ہیں ترجمان میری ذات ذرّہ بے نشان کبھی سونی صبح میں ڈھونڈنا کبھی اجڑی شام کو دیکھنا کبھی بھیگی پلکوں سے جاگنا کبھی بیتے لمحوں کو سوچنا مگر ایک پل ہے امید کا ہے مجھے خدا کا جو آسرا نہیں میں نے کوئی گلا کیا نہ ہی میں… مزید پڑھیں »

ورڈپریس تبصرہ فارم میں اردو شامل کرنا

اگر آپ نے اپنے ورڈپریس کے تبصرہ کرنے کے فارم میں اردو کو شامل نہیں کیا یا آپ نے شامل کیا ہے لیکن کام نہیں کررہا تو آپ اس تحریر میں بیان کیئے گئے طریقے کے ذریعے آسانی سے شامل کر سکتے ہیں۔ سب سے پہلے آپ Javascript فائل یہاں کلک کرکے ڈاؤنلوڈ کریں اپنے کمپیوٹر میں اور پھر اسے اپنی تھیم کے فولڈر میں شامل کردیں۔ یہ فائل zip فارمیٹ میں ہے ، پہلے اسے unzip ضرور کریں اور اس کے بعد استعمال میں لائیں۔ اب آپ جائیں اپنی تھیم میں موجود فائل header.php میں اور اس فائل میں ترمیم کریں۔اس فائل میں آپ کو جہاں <head> کا ٹیگ نظر آئے وہاں پر آپ یہ لائن پیسٹ کریں۔ یاد رکھیں یہ کوڈ آپ <head> ٹیگ کے نیچے والی لائن یا اس ٹیگ میں ہی شامل کریں۔ اب آپ کو اپنی تھیم کے اندر موجود فائل comments.php میں ترمیم کرنی ہے۔آپ اس فائل کو کھولیں اور اس میں یہ تبدیلیاں کرتے جائیں۔ آپ اس میں اپنا تبصرہ فارم تلاش کریں اور مل جانے پر اس میں سب سے پہلے نام یعنی Author والی فیلڈ میں ترمیم کریں جیسا کہ اگر آپ کی یہ فیلڈ اس طرح کی ہے۔ تو آپ… مزید پڑھیں »

ورڈ پریس ویب سائٹ کو منتقل کرنا

اگر آپ اپنے ورڈپریس بلاگ یا ویب سائٹ کو ایک ہوسٹنگ سے دوسری ہوسٹنگ پر منتقل کر نا چاہ رہے ہیں اور آپ کو طریقہ معلوم نہیں ہے تو امید ہے یہ تحریر آپ کو بہت مدد کرے گی ایک ہوسٹنگ سے دوسری ہوسٹنگ پر منتقل ہونے کے لیئے۔ سب سے پہلے تو آپ اپنی پرانی ہوسٹنگ کے فائل مینیجر میں جائیں اور پھر نیچے دیا گیا طریقہ اپنائیں۔تصاویر کو بڑا دیکھنے کے لیئے تصاویر پر کلک کریں۔ نیچے دی گئی تمام ترتیبات تصویر کے نمبروں کے حساب سے ہیں۔ یہ آپ کے بلاگ یا ویب سائٹ کا پبلک فولڈر ہوتا ہے اس میں آپ جو اپلوڈ کرتے ہیں وہ آپ کے ڈومین کے لنک کے ساتھ کھلتا ہے ، آپ اس پر کلک کریں۔ اب آپ اپنی ویب سائٹ یا بلاگ کے نام پر کلک کریں۔ اب آپ کو اسے اپنے کمپیوٹر میں محفوظ کرنا ہے تو آپ Compress پر کلک کریں ، یاد رہے آپ نے اپنی ویب سائٹ یا بلاگ پر کلک کرکے منتخب کیا ہوا ہے۔ جب آپ Compress پر کلک کریں گے تو آپ کو اوپر تصویر میں دکھائی گئی ونڈو نظر آئے گی۔آپ اس میں Zip Archive پر کلک کریں۔ اور اب آپ Compress… مزید پڑھیں »

ورڈ پریس میں بیک اپ بنانا

اس تحریر میں آپ ورڈ پریس بلاگ یا ویب سائٹ کا مکمل بیک اپ بنانا جان سکیں گے۔ بیک اپ بنانے کے لیئے آپ سب سے پہلے ڈیش بورڈ میں جائیں اور پھر (Tools) پر کلک کر دیں ٹولز پر کلک کرنے کے بعد آپ یہاں پر  موجود Export پر کلک کریں۔ اب آپ ٹولز کے صفحہ پر موجود آپشن All Content پرکلک کریں اور پھر آپ نیچے موجود بٹن Download Export File پر کلک کردیں جیسا کہ نیچے تصویر میں نظر آرہا ہے۔ اب آپ بیک اپ فائل کو اپنے کمپیوٹر میں محفوظ کرلیں۔ آپ کا بیک اپ تیار ہے۔ اپڈیٹ :- یاد رہے اس طریقے سے صرف آپ اپنے بلاگ یا ویب سائٹ پر موجود تمام تحاریر ، صفحات ، تبصرے ، ٹیگ اور فارم وغیرہ ہی کا بیک اپ بنا سکتے ہیں۔

استاد اور طالب علم

استاد ایک ایسی شخصیت ہے جو ایک بچے کو دنیا کے بارے میں پرکھنا سکھاتی ہے۔اسے استاد یہ بتا تا ہے کہ وہ کون ہے ، وہ کہاں سے آیا ہے ، اسے کہاں جانا ہے ، اس کا اس دنیا میں آنے کا مقصد کیا ہے ، اس کا اصلی مالک کون ہے ، وہ کس کا غلام ہے ، اسے کس کی عزت کرنی ہے اور کس کی نہیں ، استاد بچہ کی شخصیت نکھارنے میں اسے سنوارنے میں اسے بنانے میں ایک اہم کردار ادا کرتے ہیں۔کہا جاتا ہے کہ بچے کی پہلی درسگاہ ماں کی گود ہے ، لیکن آج کے دور میں بچے کی درسگاہ ماں کی گود کم اور محلے کی گلی کے بچوں کے ساتھ زیادہ ہے۔لوگ کہتے ہیں یہ بچے خراب ہیں ، سوال بنتا ہے انہیں خراب کون کرتا ہے۔بچا جب پیدا ہوتا ہے تو وہ ہر کام کے لیئے مجبور ہوتا ہے۔اس کی تربیت اس کی پیدائش کے بعد شروع ہوتی ہے۔ آج کے اس دور میں بچے کی پہلی درسگاہ وہ ماں کی گود ہے جس میں بچہ آرام محسوس کرتا ہے ، وہ ماں نہیں جو بچے کو چھوڑ کر بازاروں میں شاپنگ کو زیادہ ترجیح دیتی ہے… مزید پڑھیں »